1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

کیا اب بھی کوئی مرزائی مرزا قادیانی کو سچا کہے گا؟

ضیاء رسول امینی نے 'روحانی خزائن جلد18' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ اکتوبر 26, 2014

  1. ‏ اکتوبر 26, 2014 #1
    ضیاء رسول امینی

    ضیاء رسول امینی منتظم اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    سنجیدہ قادیانی حضرات اگر ان چند باتوں پہ سچے دل سے غور کر لیں تو ان پہ حقیقت واضع ہو جائے گی اور سچ اور جھوٹ سامنے آجائے گا۔
    اب ذرا غور کریں ۔ مرزا قادیانی خود لکھتا ہے کہ ''قیامت تک نجات کا پھل کھلانے والا وہ ہے جو زمین حجاز میں پیدا ہوا تھا اور تمام دنیا اور تمام زمانوں کی نجات کے لیئے آیا تھا اور اب بھی آیا مگر بروز کے طور پر'' روحانی خزائن جلد 18 صفحہ 220
    [​IMG]

    سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ جب حضرت محمد صلی اللّہ علیہ وسلم تمام دنیا اور تمام زمانوں کے لیئے تشریف لائے تو مرزا قادیانی کی ضرورت کیسے پیدا ہوئی؟ کیا آج کے وقت اور زمانے کے لیئے تاجدار ختم نبوت صلی اللہ علی وسلم نبی نہیں ہیں کیا ہم تمام انسانوں اور تمام زمانوں میں شامل نہیں؟؟ یا کیا نعوذباللہ آپ صلی اللّہ علیہ وسلم سے نبوت میں کوئی کمی رہ گئی ہے؟ اور یہ سوال تو پیدا ہو ہی نہیں سکتا کیونکہ خود مرزا قادیانی کہہ رہا ہے کے وہ تمام دنیا اور تمام زمانوں کے لیئے تشریف لائے اور اس پہ قرآن پاک کی گواہی

    وَمَا أَرْسَلْنَاكَ إِلَّا رَحْمَةً لِلْعَالَمِينَ

    وَمَآ اَرْسَلْنٰکَ اِلَّا کَآفَّۃً لِّلنَّاسِ

    قُلْ يَا أَيُّهَا النَّاسُ إِنِّي رَسُولُ اللّهِ إِلَيْكُمْ جَمِيعاً

    ان کے علاوہ اور بھی کافی ساری آیات جو کہ اس بات کی واضع دلیل ہیں کہ آپ صلی اللّہ علیہ وسلم تمام دنیا اور تمام زمانوں کے لیئے مبعوث فرمائے گئے خود مرزا نے اپنی زبان سے اقرار کیا تو پھر مرزا کی ضرورت کیوں محسوس ہوئی؟ اور آپ بخوبی جانتے بھی ہو کہ یہ ظلی بروزی نبوت کا قرآن و حدیث میں کہیں کوئی ثبوت بھی نہیں نہ ہی پہلے کوئی ایسا نبی آیا۔

    دوسری بات یہ کہ مرزا کے بقول وہ خود نعوذ بااللہ محمد رسول اللہ صلی اللّہ علیہ وسلم ہے تو پھر ایک بات سوچیئے کہ آج آپ لوگ ہمارا نزول عیسی علیہ السلام کا عقیدہ غلط ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہو اور اپنی طرف سے یہ سمجھتے ہو کہ مسلمان نزول عیسی علیہ السلام کے عقیدہ میں غلط فہمی کا شکار ہیں تو کیا آپ لوگ یہ بھی سمجھتے ہیں کہ نعوذ بااللہ حضور اکرم صلی اللّہ علیہ وسلم بھی نزول عیسی کے عقیدہ کے بارے غلط فہمی کا شکار تھے؟ اگر آپ ایسا نہیں سمجھتے تو بقول مرزا قادیانی حضرت محمد صلی اللّہ علیہ وسلم بذات خود ظلی یا بروزی حالت میں دنیا میں نعوذ بااللہ دوبارہ آئے ہیں تو یقینا وہ تو نزول عیسی علیہ السلام کے بارے میں درست عقیدہ پر ہونے چاہیئیں۔ اب ذرا غور کیجیئے کہ خود مرزا قادیانی اپنی زندگی کے 50 یا کم و بیش سال نزول عیسی علیہ السلام کے عقیدہ پہ یقین رکھتا رہا اگر مرزا قادیانی کے مطابق یہ ظلی بروزی طور پہ آیا ہے تو اس کو تو پتہ ہونا چاہیئے تھا کہ نزول عیسی علیہ السلام کا عقیدہ درست نہیں ہے پھر یہ کیوں اتنے سال تک اسی عقیدے پہ جما رہا؟ اب دو ہی باتیں ہو سکتی ہیں کہ یا تو مرزا قادیانی کا ظلی بروزی ہونے کا دعوی جھوٹا ہے کیونکہ باالفرض محال اگر یہ دعوی سچ سمجھا جائے تو پھر حیات مسیح اور وفات مسیح میں سے کونسا دعوی آپ سچ سمجھیں گے؟ اگر تو حیات مسیح کا دعوی درست تھا تو پھر آپ لوگوں کا اور خود مرزا کا وفات مسیح کا دعوی جھوٹا ثابت ہوتا ہے اور اگر وفات مسیح کا دعوی درست ہے تو پھر خود مرزا کا پہلے جو عقیدہ تھا وہ بھی غلط اور حضور اکرم صلی اللّہ علیہ وسلم بھی نعوذبااللہ غلط ثابت ہوتے ہیں کہ بروزی ظلی روپ میں آنے کے بعد بھی 50 سال حیات عیسی کے قائل رہے اور 12 سال تو مرزا کے بقول وہی آنے کے بعد بھی اسی عقیدہ پہ جمے رہے (نعوذباللہ نقل کفر کفر ناباشد)۔ اور مرزا نے اپنی کتاب براہین احمدیہ کے بارے میں خود لکھا ہے کہ اس نے 1864 یا 1865 میں ایک خواب میں آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کو دیکھا اور پھر جو سارا خواب سنایا اس کا خلاصہ یہ ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کتاب کو پسند فرمایا اور اس سے ایک پھل بنایا پھر اس پھل سے ایک مردے کو زندہ کیا اب ظاہر ہے حقیقت میں مرزے سے کوئی مردہ زندہ تو نا ہو سکا اس کی تاویل یہ ہی کر سکتے ہیں کہ روحانی طور پہ مردہ دلوں کو زندہ کرنا مطلب تھا جو ان کے بقول مرزا نے کیا بعد میں یا جو بھی تاویل کرلو مطلب یہی بنتا ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کتاب کو پسند فرمایا اور یہ کتاب براہین احمدیہ تھی جس میں مرزا قادیانی نے حیات عیسی علیہ السلام کو باقاعدہ قرآن پاک سے ثابت کیا ہے۔ اور خود کا بھی یہی عقیدہ تھا تو اگر حیات عیسی کا عقیدہ غلط ہے تو پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے نعوذبااللہ ایک غلط عقیدے والی کتاب کو پسند فرمایا؟ یا یہ کہیں گے کہ نعوذبااللہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو بھی ٹھیک عقیدے کا پتا نہیں تھا؟ اور اگر پتا تھا تو پھر کتاب کی تصحیح کیوں نہ فرمائی اور غلط عقیدہ والی کتاب کو ہی پسند فرما دیا؟ ملاحظہ ہو مرزا قادیانی کا خواب روحانی خزائن جلد 1 صفحہ 274 تا 276
    [​IMG]
    [​IMG]
    [​IMG]
    اسی جگہ براہین احمدیہ میں ایک اور جگہ لکھتا ہے جس کا خلاصہ یہ ہے کہ جس کو محبت رسول صلی اللہ علیہ وسلم اور محبت اہل بییت حاصل ہوتی ہے وہ انہی طیبین اور طاہرین کی وراثت پاتا ہے اور تمام علوم اور معارف میں ان کا وارث ٹھہرتا ہے اور پھر ایک خواب بیان کرتا ہے۔ میں وہ الفاظ تحریر نہیں کرسکتا اس میں اس خبیث نے حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا کی بد ترین گستاخی کی ہے اصل بات کی طرف آتا ہوں جس میں کہتا ہے کہ حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا نے اس کو ایک تفسیر قرآن کی کتاب دی اور کہا کہ یہ وہ کتاب ہے جو حضرت علی رضی اللہ عنہ نے لکھی ہے اور ظاہر ہے مرزا قادیانی نے بھی قرآن کی تفسیر اسی تفسیر کے عین مطابق کی ہوگی اگر نہیں کی تو بھی اسکی تفسیر جھوٹی کیونکہ حضرت علی رضی اللہ عنہ کی تفسیر اور پھر اس پہ آپ صلی اللی علیہ وسل کی پسندیدگی اس میں تو غلطی کا تصور بھی نہیں کیا جا سکتا اس سے صاف ظاہر ہے کہ یہ اپنے علم کو ان پاک ہستوں کے علم کے عین مطابق ہونے کا دعوی کر رہا ہے اور اپنی تفسیر کو ان کی تفسیر کے عین مطابق۔ تو کیا ان تمام ہستیوں حضرت علی حضرت بی بی فاطمہ اور خود آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کاحیات عیسی علیہ السلام کا عقیدہ بھی نعوذ بااللہ غلط ہے جس کو یہ براہین احمدیہ میں ثابت کرتا اور مانتا رہا ہے؟؟؟ باقی سب کے عقیدے غلط جن کی قربت اور جن میں فنا ہونے کی وجہ سے نبوت جیسے عظیم مقام کا دعوی کرتا ہے وہ سب غلط اور یہ ہی ایک سچا انسان رہ گیا ہے دنیا میں؟؟؟ ملاحظہ ہو روحانی خزائن جلد 1 صفحہ 599
    [​IMG]
    [​IMG]

    باقی اگر آپ لوگ احادیث کو نہ بھی مانو تب بھی مرزا قادیانی کو تو مانتے ہی ہو اور وہ ظلی بروزی شکل میں آیا تو وہ پھر کیوں غلط عقیدے پر رہا؟؟؟؟؟ اگر غلط عقیدے پر رہا تو مطلب یہ ہوا کہ نعوذ بااللہ اللہ رب العزت نے قرآن پاک تو نبی پاک صلی اللّہ علیہ وسلم پہ اتار مگر سمجھایا اور سکھایا نہیں؟؟؟ یہ عقیدہ رکھو تب بھی کفر ثابت ہوگیا کیونکہ اللہ رب العزت فرماتا ہے الرحمٰن علم القرآن۔ اور پھر الیوم اکملت لکم دینکم کو کس کھاتے میں ڈالو گے؟ اگر کہو کہ آللہ رب العزت نے قرآن پاک ٹھیک ٹھیک نہیں سمجھایا نعوذبااللہ تو اس آیت میں اللہ تعالی دین مکمل ہونے کا کیوں فرما رہا ہے؟ جب قرآن پاک ٹھیک سمجھایا نہیں تو دین مکمل کیسے ہوا؟ اور جب الرحمٰن علم القرآن کے مطابق خود اللہ رب العزت نے حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو قرآن سکھایا تو کیا اللہ رب العزت نے بھی نعوذبااللہ غلط سکھایا؟؟؟ اور اگر دین ٹھیک سمجھایا تو جب اس مرزا قادیانی کے بقول یہ ظلی بروزی رنگ میں آیا تو پھر اس نے غلط عقیدہ کیوں رکھا؟ اور ایسا شخص جو آپ لوگوں کے بقول پہلے غلط عقیدے پہ تھا تو ایسے جھوٹے شخص کے دوسرے عقیدے پہ کیسے یقین کرتے پھر رہے ہو؟ کیا کوئی جھوٹا بھی اللہ کا نبی ہوتا ہے؟ کیا کوئی غلط عقیدے والا بھی اللہ کا نبی ہوتا ہے؟ جب کہ کبھی یہ مرزا قادیانی کہتا ہے کہ یہ مقام میں نے فنا فی الرسول ہو کے حاصل کیا ہے تو کیا کوئی ایسا شخص جس کا عقیدہ ہی آپ کے مطابق قرآن کے خلاف ہو اور غلط ہو تو وہ فنا فی الرسول کا مقام کیسے پا سکتا ہے؟ اور ویسے بھی اگر اس طرح سے نبوت ملتی ہے تو اور کسی کو کیوں نہیں ملا یہ مقام؟ اور اب کیوں نہیں ملتا یا پھر باقی جو جو بھی نبوت کا دعوے دار ہے ان سب کو بھی مانو تا کے جہنم میں آپ کے مزید درجات پست ہوں۔
    اب دیکھتے ہیں کہ مرزا کا پہلے والا عقیدہ کس بنیاد پہ تھا اور بعد والا کس بنیاد پہ تھا۔
    لکھتا ہے کہ کتاب براہین احمدیہ جس کو مولف نے خدائے تعالی کی طرف سے ملہم و مامور ہو کر بغرض اصلاح و تجدید دین تالیف کیا ہے روحانی خزائن جلد 6 صفحہ 38
    جب خدا سے ملہم اور مامور ہو کے یہ کتاب لکھی تو کیا حیات عیسی علیہ السلام کا عقیدہ خدا نے غلط لکھوایا؟ کیا خدا کو نہیں پتہ تھا کہ عیسی علیہ السلام زندہ نہیں ہیں؟ اور اگر خدا نے تو ٹھیک لکھوایا مگر اس نے غلط اور جھوٹی بات لکھی تو ایسے جھوٹے انسان کے باقی جھوٹے الہام کیسے مان رہے ہو؟ کیا ثبوت ہے اس بات کا کہ جو شخص اتنے سال تک آپ لوگوں کے مطابق خدا کی وہی کے متعلق جھوٹ بولتا رہا وہ شخص بعد میں وحی سے متعلق جھوٹ نہیں بولتا ہوگا؟ یا تو اس کی پہلی وحی جھوٹی یا بعد والی جھوٹی اور جس کو بھی جھوٹی سمجھو اس کی کذب بیانی تو ظاہر ہو گئی اور ایک جھوٹے شخص کو کس بنیاد پہ نبی مانتے ہو؟ جو شخص 12 سال تک خدا کی وحی کو غلط اور مسلمانوں کے عقیدے کو سچ سمجھتا اور ثابت کرتا رہا وہ بھی قرآن و حدیث سے ؟؟؟ اور جو شخص ایک بار آپ کے مطابق قرآن و حدیث کی غلط تشریح کر سکتا ہے وہ بعد میں کیسے سچا ہو سکتا ہے؟ کیا اللہ تعالی اپنے نبی سے پہلے غلط عقیدے کا پرچار کرواتا رہا؟ اس کو معلوم نہیں تھا تو کیا خدا کو بھی معلوم نہیں تھا کہ اس نے نبی ہونا ہے نعوذباللہ جو اس سے قرآن و حدیث غلط تفسیر کرواتا رہا اور اسے ایک غلط عقیدے پر رکھا؟ خدا کے خوف سے ڈرو ایسے عقیدے سے خدا کی بھی گستاخی کر رہے ہو اس نے جو کرنا تھا کر گیا تم لوگ کیوں اپنی عاقبت خراب کر رہے ہو؟

    [​IMG]

    اسی طرح ایک جگہ لکھتا ہے کہ ہم نے کسی بھی کتاب میں کوئی بھی ایسی بات نہیں لکھی جو نصوص قرآنیہ اور نصوص حدیثیہ کے خلاف ہو اور یہ بات مرزا قادیانی نے 1993 میں حمامتہ البشری میں لکھی جب کے براہین اس سے 9،10 سال پہلے لکھی گئی تھی ملاحظہ ہو روحانی خزائن جلد 7 صفحہ 285
    [​IMG]
    دوسری جگہ یہ بھی حمامتہ البشری میں لکھا کہ اور اللہ جانتا ہے میں نے صرف وہی کہا ہے جو اللہ نے فرمایا ہے اور میں نے کبھی ایسا کوئی کلمہ نہیں کہا جو اللہ کی بات کے خلاف ہو اور نہ میری قلم سے میری زندگی میں کوئی ایسی بات نکلی روحانی خزائن جلد 7 صفحہ 186

    [​IMG]

    جب اس شخص کا دعوی ہے کہ یہ کتاب بھی خدا کی طرف سے ملہم ہو کر لکھی اور کبھی میرے قلم سے یا زبان سے کوئی غلط لفظ بھی نہیں نکلا جو قرآن و حدیث کے خلاف ہو تو پھر بتاو کہ اس کا کونسا عقیدہ درست تھا؟ حیات عیسی کا یا وفات عیسی کا؟ جس کو بھی درست سمجھو بحر حال ایک عقیدہ تو غلط ثابت ہوگا جب کہ یہ کہتا ہے کہ میں نے کبھی بھی کوئی بھی بات قرآن و حدیث اور اللہ تعالی کی بات کے خلاف نہیں لکھی اور پھر خود ہی اقرار بھی کر رہا ہے کہ میں 12 سال تک وحی کی غلط تاویل کرتا رہا کیا اب بھی یہ شخص جھوٹا ثابت نہیں ہوتا؟؟؟
    اور وحی کے آنے کے بعد بھی 12 برس تک وحی کی غلط تاویل کرتا رہا کیا کوئی با شعور انسان ایسے پاگل کو نبی مان سکتا ہے؟ کیا کوئی نبی اللہ کی وحی کی غلط تاویل بھی کرتا ہے؟ ہوش کے ناخن لو مرزائیو ابھی بھی وقت ہے اس قدر جھوٹے شخص کی باتوں میں آ کے اپنی آخرت تباہ نہ کرو
    ملاحظہ ہو روحانی خزائن جلد 22 صفحہ 153
    [​IMG]
    اور روحانی خزائن جلد 19 صفحہ 113
    [​IMG]

    آج وقت ہے اپنا ایمان درست کرو اور یہ کیسی ستم ظریفی ہے کہ ہم لوگ آپ لوگوں کا ایمان درست کرنے کے لیئے تمہیں تمہارے نام نہاد نبی کی اپنی لکھی ہوئی کتابوں کو پڑھنے کا کہتے ہیں کبھی سب تعصب بالائے طاق رکھ کے سچے دل سے اور حق کو سمجھنے کی غرض سے اسی مرزا قادیانی کی لکھی ہوئی اصل کتابیں پڑھ کے تو دیکھو آپ کو پتہ چل جائے گا کہ یہ شخص کتنا بڑا جھوٹا اور دجال ہے ہماری بات مت مانو ہمارے دلائل بھی مت مانو کم از کم اپنے نبی کی تو مان لو اس کی ساری کتابیں ہی پڑھ لو مگر میں سب کو یہی کہتا ہوں کہ مرزا کی اصل اور ساری کتابیں پڑھو چھوٹی بڑی سب صرف اپنے مربیوں کی بتائی ہوئی مخصوص عبارات یا بعد اب مربیوں کی اپنی لکھی ہوئی کتابیں مت پڑھو صرف اس کی پڑھو جسے نبی مانتے ہو تو آپ پہ سب حقیقت خود ہی واضع ہو جائے گی ورنہ یاد رکھو یہ زندگی دوبارہ نہیں ملے گی نہ موت کے بعد توبہ ہے اور کافر کا ٹھکانہ ہمیشہ کے لیئے جہنم ہے۔ آج تم لوگ اپنا پیسہ بھی وقت بھی برباد کر رہے ہو سوچو اگر قیامت میں کافروں کی لائن میں کھڑے ہوگئے تو کیا کرو گے وہاں؟ وہان کوئی عزر اور بہانہ اور تاویل نہیں چلے گی آج ہر مسلمان آپ کو سمجھا رہا ہے آج ہی وقت ہے اگر کال یہ جان ہوا ہوگی تو یاد رکھنا مرزا اور اس جیسے باقی سب جھوٹے نبی جہنم کے سب سے نچلے درجے میں ہوں گے تو تمہارا کیا حال ہوگا وہاں؟؟ آج وقت ہے آج وقت ہے آج وقت ہے
    اور جب قرآن پاک کا واضع فیصلہ ہے کہ کوئی اہل کتاب ایسا نہیں جو عیسی علیہ السلام کی موت سے پہلے ان پر ایمان نہ لائے کیا تمام اہل کتاب ایمان لے آئے ہیں یا جب آپ لوگ ان کی وفات ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہو تب سب ان پہ ایمان لے آئے تھے؟؟ آپ لوگوں کو حیات عیسی علیہ السلام کے لیئے ایک یہی دلیل کافی ہے اگر ہدایت چاہتے ہو تو۔


    ملاحظہ ہو سورۃ النساء آیت نمبر 159
    آخری تدوین : ‏ اکتوبر 26, 2014
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر