1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

مرزاغلام احمد قادیانی کے حالات (کبھی کبھی زنا)

محمدابوبکرصدیق نے 'قادیانیت' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ ستمبر 28, 2014

  1. ‏ ستمبر 28, 2014 #1
    محمدابوبکرصدیق

    محمدابوبکرصدیق ناظم پراجیکٹ ممبر

    رکنیت :
    ‏ جون 29, 2014
    مراسلے :
    15,772
    موصول پسندیدگیاں :
    3,124
    نمبرات :
    113
    جنس :
    مذکر
    پیشہ :
    بائیومیڈیکل انجینیئر
    مقام سکونت :
    لاہور
    مرزاغلام احمد قادیانی کے حالات (کبھی کبھی زنا)
    ’’حضرت مسیح موعود (مرزاقادیانی) ولی اﷲ تھے اور ولی اﷲ بھی کبھی کبھی زنا کرلیا کرتے ہیں۔ اگر انہوں نے کبھی کبھار زنا کر لیا تو اس میں کیا حرج ہوا۔ پھر لکھا ہے ہمیں حضرت مسیح موعود (مرزاقادیانی) پر اعتراض نہیں کیونکہ وہ کبھی کبھی زنا کیا کرتے تھے۔ ہمیں اعتراض موجودہ خلیفہ پر ہے۔ کیونکہ وہ ہر وقت زنا کرتا رہتا ہے۔‘‘
    (الفضل قادیان مورخہ۳۱؍اگست ۱۹۳۸ئ)
    • Like Like x 1
    • Winner Winner x 1
  2. ‏ مئی 17, 2016 #2
    احقر العباد :عثمانحیدر

    احقر العباد :عثمانحیدر رکن ختم نبوت فورم

    رکنیت :
    ‏ اپریل 15, 2016
    مراسلے :
    3
    موصول پسندیدگیاں :
    1
    نمبرات :
    3
    جنس :
    مذکر
    پیشہ :
    ادیان باطلہ کا رد
    مقام سکونت :
    فیصل آباد
    اسلام علیکم بھائی اس حوالہ کا۔سکین مل سکتا کیا ؟؟؟؟
  3. ‏ اگست 19, 2016 #3
    محمد منیب الرحمٰن

    محمد منیب الرحمٰن رکن ختم نبوت فورم

    رکنیت :
    ‏ جنوری 30, 2016
    مراسلے :
    31
    موصول پسندیدگیاں :
    9
    نمبرات :
    8
    جنس :
    مذکر
    سکین مل سکتا ہے کیا ؟
  4. ‏ اگست 20, 2016 #4
    مبشر شاہ

    مبشر شاہ رکن عملہ منتظم اعلی

    رکنیت :
    ‏ جون 28, 2014
    مراسلے :
    2,454
    موصول پسندیدگیاں :
    1,320
    نمبرات :
    113
    جنس :
    مذکر
    پیشہ :
    ٹیچنگ ، حکمت
    مقام سکونت :
    گوجرانوالہ
  5. ‏ ستمبر 5, 2016 #5
    خدمت گذار

    خدمت گذار رکن ختم نبوت فورم

    رکنیت :
    ‏ ستمبر 4, 2016
    مراسلے :
    7
    موصول پسندیدگیاں :
    0
    نمبرات :
    1
    جنس :
    مذکر
    یہ بالکل غلط اور جھوٹا اعتراض ہے ۔
    افسوس ہے کہ بارہا جماعت احمدیہ کی طرف سے یہ بات بیان کی جاتی ہے کہ نامکمل حوالہ دیکر اعتراض کر دیا جاتا ہے ۔ یہ اعتراض بھی ایسا ہی نامکمل حوالے کا شاخسانہ ہے۔
    یہ ایسی ہی طرز کا اعتراض ہے کہ جس طرح کوئی قرآن کریم کی آیت’’لَا تَقْرَبُوا الصَّلٰوۃَ‘‘(النساء ) کا حوالہ دیکر کہدے کہ نماز نہ پڑھنے کا حکم ہے، جبکہ اس کے بعد ’’وَاَنْتُمْ سُکٰرٰ ی ‘‘(جب تم پر مدہوشی کی کیفیت ہو)کے الفاظ نہ پڑھے۔اس اعتراض میں کس طر ح تحریف اور بہتان سے کام لیا گیا ہے اس کا اندازہ ان کی پیش کردہ معترضہ عبارت سے لگا یا جاسکتا ہے۔مندرجہ بالا مراسلے میں جو حوالہ پیش کیا گیا ہے وہ یہ ہے :۔

    “حضرت مسیح موعودؑولی اللہ تھے۔اور ولیا ء اللہ بھی کبھی کبھی زنا کرلیا کرتے ہیں۔اگر انھوں نے کبھی کبھار زنا کرلیا ۔تو اس میں حرج کیا ہوا۔پھر لکھا ہے۔ہمیں حضرت مسیح موعودپر اعتراض نہیں ۔کیونکہ وہ کبھی کبھی زنا کرتے تھے۔ہمیں اعتراض موجودہ خلیفہ پر ہے۔کیونکہ وہ ہر وقت زنا کرتا رہتا ہے۔”

    (روزنامہ الفضل قادیان دارالامان مؤ رخہ31اگست1938ء)

    الفضل کا نا مکمل حوالہ دے کر یہ غلط تاثر دینے کی کوشش کی گئی ہے کہ نعوذ باللہ جماعت احمدیہ خود اس بات کو تسلیم کرتی ہے۔نعوذباللہ من ذالک ۔
    حقیقت حال یہ ہے کہ معترضہ عبارت دراصل ایک منافق کی ہے جس نے جماعت احمدیہ کےدوسرے خلیفہ حضرت مرزا بشیر الدین محمود احمد صاحب کو بہت سے گمنام خطوط لکھے جن میں اپنی منافقت کا اظہار کرتے ہوئے اعتراضات کیے۔اسی کے ایک خط کو حضرت صاحب نے اپنے ایک خطبہ میں پیش کیا ۔آپ نے فرما یا کہ ایک طرف یہ شخص اپنے اخلاص کا اظہار کرتا ہے تو دوسری طرف سلسلہ سے دشمنی کا اظہار حضرت مسیح موعودؑ اور آپؓ پر اس قسم کے بے ہودہ الزام لگا کر کرتا ہے۔خطبہ کےمکمل اصل الفاظ یہ ہیں

    “اس قدر اعتراضات کرنے کے با وجود ہر خط میں بڑا اخلاص بھی ظاہر کیا ہوا ہوتا ہے۔اور لکھا ہوتا ہے ۔ہم سلسلہ کے خادم ہیں۔مگر اس کی سلسلہ سے محبت کا اندازہ اسی سے ہوسکتا ہے کہ ایک خط میں جس کے متعلق اس نے تسلیم کیا ہے کہ وہ اسی کا لکھا ہوا ہے۔اس پر یہ تحریر کیا ہے کہ(یہاں سے اس شخص کے الفاظ شروع ہوتے ہیں ۔ناقل) حضرت مسیح موعودولی اللہ تھے۔اور ولی اللہ بھی کبھی کبھی زنا کرلیا کرتے ہیں۔اگر انھوں نے کبھی کبھار زنا کرلیا ۔تو اس میں حرج کیا ہوا۔پھر لکھا ہے۔ہمیں حضرت مسیح موعودپر اعتراض نہیں ۔کیونکہ وہ کبھی کبھی زنا کرتے تھے۔ہمیں اعتراض موجودہ خلیفہ پر ہے۔کیونکہ وہ ہر وقت زنا کرتا رہتا ہے۔(یہاں اس کے الفاظ ختم ہوئے۔ناقل)اس اعتراض سے پتہ لگتا ہے۔کہ یہ شخص پیغامی طبع ہے۔اس لئے کہ ہما را حضرت مسیح موعود علیہ الصلوۃ والسلام کے متعلق اعتقاد ہے کہ آپ نبی اللہ تھے ۔مگر پیغامی اس بات کو نہیں مانتے اور وہ آپ کو صرف ولی اللہ سمجھتے ہیں۔تو جب کو ئی شخص ایک سچائی پر اعترا ض کرتا ہے اسے لازماً دوسری سچا ئیوں پر بھی اعتراض کرنا پڑتا ہے۔”

    (الفضل مؤ رخہ31اگست1938ءص6)

    اور اگر غور سے پڑھا جائے تو مندرجہ بالا حوالہ سے بھی پڑھا جا سکتا ہے کہ یہ عبارت اس منافق کی ہے اور ظاہر ہے کہ اس کی عبارت کی کیا حیثیت ہو سکتی ہےکیونکہ منافقین ہمیشہ انبیاء و رسولوں کے مشن کو نقصان پہنچا نے کے لئے ہر حد پار کر جاتے ہیں ۔اور حوالہ دینے والے کی دیانت یہ ہے کہ انہوں نے حوالہ میں "پھر لکھا ہے "کے الفاظ کلیتا ختم کر دئیے ہیں۔

اس صفحے کی تشہیر