1. Photo of Milford Sound in New Zealand
  2. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  3. Photo of Milford Sound in New Zealand
  4. Photo of Milford Sound in New Zealand

قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں

ضیاء رسول امینی نے 'منظوم کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ نومبر 26, 2015

  1. ‏ نومبر 26, 2015 #1
    ضیاء رسول امینی

    ضیاء رسول امینی منتظم اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں
    خدا کرے سدا رہیں منہ پہ یہ نحوستیں
    ہر طرف سے لعنتیں ہیں سوئے قادیاں رواں
    ہر ایک طفل و مرد و زن منافقت میں عالیشاں
    سو سو بار موتر اور ٹٹیاں رواں دواں
    اسی کے جیسے ہیں سب قادیانی کے نشاں
    ڈھونڈتے ہیں حیض زدہ شلوار میں یہ برکتیں
    قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں
    خدا کرے سدا رہیں منہ پہ یہ نحوستیں
    مسیلمہ کا قافلہ کذابوں کا یہ سلسلہ
    نصرانیوں یہودیوں کے فنڈ سے ہے یہ پلا
    براہین احمدیہ کے دھوکے سے ملا تھا آئیڈیا
    پچاس و پانچ میں فقط ہے نقطے کا ہی فاصلہ
    ویزوں اور بچیوں کی دیتے ہیں یہ لالچیں
    قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں
    خدا کرے سدا رہیں منہ پہ یہ نحوستیں
    محمدی بیگم کی لا کے سونگھتا شلوار تھا
    الہام خود ہی گھڑتا تھا بڑا ہی یہ عیار تھا
    رجولیت کروانے کو دن رات بے قرار تھا
    سینمے میں بھی جاتا تھا کنجریوں کا یار تھا
    اسی لیے ہیں پڑ رہی آج تک بھی لعنتیں
    قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں
    خدا کرے سدا رہیں منہ پہ یہ نحوستیں
    خلیفوں کے کمال بھی اس سے کچھ کم نہیں
    اب زانیوں شرابیوں کے سلسلے میں دم نہیں
    خود مرزا تو کرتا تھا کبھی کبھی زنا مگر
    خلیفوں کا اس کے ہے ہر ایک دن ہی رنگیں
    رہی بیٹیاں بھی ان کے بستروں کی زینتیں
    قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں
    خدا کرے سدا رہیں منہ پہ یہ نحوستیں
    پھر گندے گارے کے لیپ اور جوتے الٹے سیدھے ہوں
    جب گڑ کی جگہ ٹٹی کے ڈھیلے کھائے ہوں
    مسیح ان کا خارشوں کے مزے بھی لیتا تھا
    پی کے پورٹ وائن ساتھ لڑکیوں کے سوتا تھا
    قمیض کے بٹن لگاتا کوٹ کے کاج میں
    قادیاں کی وہ غلاظتیں وہ چندے کی سیاستیں
    خدا کرے سدا رہیں منہ پہ یہ نحوستیں
    • Like Like x 1

اس صفحے کی تشہیر