1. ختم نبوت فورم پر مہمان کو خوش آمدید ۔ فورم میں پوسٹنگ کے طریقہ کے لیے فورم کے استعمال کا طریقہ ملاحظہ فرمائیں ۔ پھر بھی اگر آپ کو فورم کے استعمال کا طریقہ نہ آئیے تو آپ فورم منتظم اعلیٰ سے رابطہ کریں اور اگر آپ کے پاس سکائیپ کی سہولت میسر ہے تو سکائیپ کال کریں ہماری سکائیپ آئی ڈی یہ ہے urduinملاحظہ فرمائیں ۔ فیس بک پر ہمارے گروپ کو ضرور جوائن کریں قادیانی مناظرہ گروپ
  2. ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ

    تحفظ ناموس رسالتﷺ و ختم نبوت پر دنیا کی مایہ ناز کتب پرٹائپنگ ، سکینگ ، پیسٹنگ کا کام جاری ہے۔آپ بھی اس علمی کام میں حصہ لیں

    ختم نبوت لائبریری پراجیکٹ
  3. ہمارا وٹس ایپ نمبر whatsapp no +923247448814
  4. [IMG]
  5. ختم نبوت فورم کا اولین مقصد امہ مسلم میں قادیانیت کے بارے بیداری شعور کرنا ہے ۔ اسی مقصد کے حصول کے لیے فورم پر علمی و تحقیقی پراجیکٹس پر کام جاری ہے جس میں ہمیں آپ کے علمی تعاون کی اشد ضرورت ہے ۔ آئیے آپ بھی علمی خدمت میں اپنا حصہ ڈالیں ۔ قادیانی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد قادیانی کتب پراجیکٹ مرزا غلام قادیانی کی کتب کے رد کے لیے یہاں جائیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ تمام پراجیکٹس پر کام کرنے کی ٹرینگ یہاں سے لیں رد روحانی خزائن پراجیکٹ کا طریق کار

جب تو نے مجھے زنانہ بنا رکھا ہے

ضیاء رسول امینی نے 'منظوم کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ اکتوبر 10, 2017

  1. ‏ اکتوبر 10, 2017 #1
    ضیاء رسول امینی

    ضیاء رسول امینی منتظم اعلیٰ رکن عملہ ناظم پراجیکٹ ممبر رکن ختم نبوت فورم

    مرزا پادیانی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    جب تو نے مجھے زنانہ بنا رکھا ہے
    سنگ ہر شخص نے ہاتھوں میں اٹھا رکھا ہے
    سوچو مجھ پر کیا کڑی عشق میں گزری ہوگی
    کہ سولہ دن تک لہو مقعد سے بہا رکھا ہے
    ہوا ہے پیدا بعد ڈارون کے باپ ڈارون کا
    نام جس نے رجولیت کا ارتقاء رکھا ہے
    یہ نہ ہوتی تو بچپنے میں ہی مرگیا ہوتا
    کیا دنیا میں رجولیت کے سوا رکھا ہے
    کیڑو مجھ کو قبر میں ڈستے کیوں ہو
    میں تم کو بھی دنیا میں مسیحا رکھا ہے
    ہوں کیڑا میں خود ہی کہ کوئی کیڑا مجھ میں
    اسی الجھن نے مجھے دن رات ستا رکھا ہے
    انگریزو اب میری امت پہ برستے کیوں ہو
    میں تم کو بھی کبھی اپنا خدا رکھا ہے
    ہوتی ہے یلاش کی بھی توہین شیطانوں میں
    کہ تو نے تو مسیحا اک کھسرا بنا رکھا ہے
    لوٹ لے جائے کوئی اسکو نصیبوں والا
    میں نے بیگم کو سٹیشن پہ گھما رکھا ہے
    بولتا ہوں پھر بھی رات دن شوق سے میں
    جھوٹ پہ خود ہی فتوی بھی کڑا رکھا ہے
    شرم آتی نہیں پھر بھی اپنی غلاظت پہ
    بے شرمی میں یلاش نے خوب مزہ رکھا ہے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    بقلم ضیاء رسول

اس صفحے کی تشہیر